کولمبو: سری لنکا کے معروف انگریزی روزنامے ‘مرر’ نے رپورٹ کیا ہے کہ سری لنکن پولیس نے تصدیق کردی ہے کہ ایسٹر کے تہوار پہ تین گرجا گھروں اور تین ہوٹلوں میں ہوئے نو بم دھماکے خودکش حملے تھے اور یہ نو خودکش بمباروں نے کیے جن میں سے آٹھ کی شناخت ہوگئی ہے جبکہ ان سب کا تعلق سری لنکا کے سلفی فرقے سے نکل کر بننے والی تکفیری دہشت گرد تنظیم نیشنل توحید جماعت سے ہے جو گزشتہ سال کرسمس کے موقعہ پہ بدھ مجسموں کو تباہ کرنے میں بھی ملوث تھی۔

پولیس ایک خودکش حملہ آور کے گھر پہنچی تو اس کی بیوی نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا غیر ملکی میڈیا رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ خودکش بمباروں میں سری لنکا کے کروڑ پتی تاجر یوسف ابراہیم کے 2 بیٹے انشاف احمد اور الہام احمد ابراہیم بھی شامل تھے۔۔

پولیس نے تلاشی کے لیے انشاف کے گھر چھاپا مارا تو اس کی حاملہ بیوی فاطمہ نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا ، دھماکے میں فاطمہ کے 3 بچے اور 3 پولیس اہلکار بھی ہلاک ہوگئے۔

ذرائع کے مطابق تاجر یوسف ابراہیم کا تیسرا بیٹا مفرور ہے جسے پولیس تلاش کررہی ہے ، شبہ ہے کہ دہشت گرد تنظیم کی جانب سے بمباروں کی وڈیو میں موجود خاتون فاطمہ انشاف ہی تھی ۔

رپورٹ کے مطابق دھماکےکے لیے انشاف ابراہیم کی کولمبو میں واقع فیکٹری میں خودکش جیکٹس تیار کی گئیں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here