بجٹ میں غریبوں اور کمزور طبقات کے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھایا گیا- بلاول بھٹو زرداری

 

اسلام آباد: پی پی پی پارلیمنٹ کے اندر بجٹ کی شدید مخالفت کرے گی- پارلیمنٹ سے باہر جو بھی یونین یا تنظیم وفاقی بجٹ کے خلاف مظاہرہ کرے گی پارٹی اس میں شریک ہوگی-

 

پی پی پی کے سیکرٹری جنرل نئیر حسین بخاری کا کہنا تھا کہ پارٹی نے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر ‘عوام دشمن وفاقی بجٹ’ کے خلاف شدید احتجاج کرنے کا فیصلہ کیا ہے- پی پی پی مزدور یونینز، ٹریڈ یونینز اور کسانوں کی تنظیموں کے احتجاج میں بھی بھرپور شرکت کرے گی-

 

پاکستان پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے زرداری ہاؤس اسلام آباد سے ایک آن لائن پارٹی کے اہم رہنماؤں اور ماہرین معشیت سے پر مشتمل اجلاس کی صدارت کی اور قومی اسمبلی میں جاری بجٹ اجلاس میں پی پی پی کی حکمت عملی پر غور کیا-

 

بلاول بھٹو زرداری نے وفاقی بجٹ 2020-21 کو “پی ٹی آئی ایم ایف” بجٹ قرار دے ڈالا-

 

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ وفاقی بجٹ معشیت،زراعت اور ہیلتھ سیکٹر کے لیے کسی سونامی سے کم نہیں ہے- اس سے ملک میں غریب اور قحط کے سے حالات پیدا ہوجائيں گے-

 

بلاول بھٹو زرداری نے عوام دشمن بجٹ کے خلاف جدوجہد کو پھیلانے کے لیے دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے بھی رابطے شروع کردیے ہیں- انہوں نے جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینٹر سراج الحق اور مسلم لیگ نواز کے سردار ایاز صادق سے رابطے کیے ہیں-

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here