خانیوال ( سپیشل رپورٹر) بلدیہ خانیوال میں غیرقانونی ڈیلی ویج ورکرز بھرتی کرنے کے الزام میں سی او بلدیہ افتخار بنگش سمیت 6 افسران کے خلاف محکمہ اینٹی کرپشن میں مقدمہ درج، بلدیہ افسران پر حکومتی خزانے کوایک کروڑ70 لاکھ روپے کا نقصان پہنچانے کا الزام

تفصیلات کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن خانیوال نے میونسپل کمیٹی خانیوال کے چیف افسر بلدیہ افتخار بنگش ، ایکسئین انفراسٹرکچر اینڈ سروسز خالد حسین سہو، فنانس اینڈ ٹریثری افسر ملک لیاقت، انچارج سینی ٹیشن قاضی فرحان ، آڈٹ افسر ملک فرخ عباس اور اکاؤنٹس افسر کے خلاف بلدیہ خانیوال میں سینی ٹیشن برانـچ میں غیر قانونی ڈیلی ویج ورکرزبھرتی کرکے سرکاری خزانے کو ایک کروڑ 70 لاکھ روپے کا نقصان پہنچانے کے الزام میں تعزیرات پاکستان کی دفعہ 161 اور انسداد رشوت ستانی ایکٹ 1947 کی شق نمبر 5/2 کے تحت مقدمے کا اندراج کیا ہے۔

ایف آئی آر کے مطابق  شہری ظفر اقبال نے  ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب کو دی گئی درخواست میں ثبوت کے ساتھ  مطلع کیا کہ سی او بلدیہ خانیوال نے 2018 تا 2019ء کے دوران محکمہ لوکل گورنمنٹ و کمیونٹی ڈویلپمنٹ اورمحکمہ فنانس کے پنجاب کے رولز و پروسیجر کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے سینی ٹیشن برانچ میں غیر قانونی بھرتیاں کرکے سرکاری خزانے کو ایک کروڑ 70 لاکھ روپے کا نقصان پہنچایا ہے جس پہ ڈی جی اینٹی کرپشن کے حکم پر ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان ریجن نے ڈپٹی ڈائریکٹر انوسٹی گیشن سرکل خانیوال کو انکوائری افسر مقرر کیا،  دوران انکوائری بلدیہ خانیوال کے افسران بھرتیوں بارے کوئی ریکارڈ پیش کرنے سے قاصر رہے جس پہ انکوائری افسر نے ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان ریجن کو بھیجی گئی سفارشات میں  اندراج مقدمہ کی سفارش کے ساتھ لکھا کہ دوران انکوائری سی او بلدیہ کے خلاف لگایا گیا الزام بادی النظر میں درست معلوم ہوتا ہے جبکہ باقی افسران کے کردار کا تعین بعد از مقدمہ تفتیش کے دوران کیا جائے۔ اس پہ ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان ریجن حیدر عباس وٹو نے بلدیہ کے چھے افسران کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم جاری کیا جس کے تحت ایف آئی آر نمبر 26 /21 درج کرلی گئی ہے۔   

بلدیہ خانیوال کے افسران کے خلاف ایف آئی آر کا عکس
بلدیہ خانیوال کے افسران کے خلاف ایف آئی آر کا عکس

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here