ابوظہبی میں پاکستانی بیٹنگ لڑکھڑا گئی، پانچ آؤٹ

0
159

ابوظہبی میں آسٹریلیا کے خلاف دوسرے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے پہلے ہی دن پاکستان کی ٹیم شدید مشکلات کا شکار ہو گئی ہے۔

آسٹریلوی بولر نیتھن لائن نے پہلے ہی سیشن میں چار وکٹیں لے کر آسٹریلیا کو ایک مضبوط پوزیشن میں لا کھڑا کیا ہے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

پاکستان نے اس میچ میں ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا اور اب سے کچھ دیر پہلے کھانے کے وقفے پر اس نے پانچ وکٹوں کے نقصان پر 77 رنز بنائے تھے۔

اس وقت کریز پر فخر زمان اور سرفراز احمد موجود ہیں اور ٹیم کو اس مشکل صورتحال سے نکالنے کے لیے سرگرداں ہیں۔ فخر زمان اپنے پہلے ٹیسٹ میچ میں نصف سنچری مکمل کرنے سے ایک رن کے فاصلے پر ہیں۔

دبئی ٹیسٹ میچ سنسنی خیز مقابلے کے بعد برابری پر ختم

’دبئی میں ٹیسٹ جیتنا کوئی آسان کام ہے؟‘

پاکستان کی جانب سے محمد حفیظ اور اظہر علی نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلی وکٹ کی شراکت میں صرف پانچ رنز بنے۔

تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGES
آسٹریلیا کو پہلی کامیابی مچل سٹارک نے دلوائی۔ آؤٹ ہونے والے بلے باز محمد حفیظ تھے جو صرف چار رنز بنا کر کیچ ہوئے۔

دوسرے اینڈ سے سپنر نیتھن لائن پاکستانی بلے بازوں پر قہر بن کر ٹوٹے اور انھوں نے پانچ اووروں میں چار رنز دے کر چار کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھا دی۔

ان کی پہلی وکٹ اظہر علی تھے جو 15 رنز بنانے کے بعد خود لائن کے ہاتھ میں کیچ تھما کر پویلین لوٹ گئے۔ اس اوور کی اگلی ہی گیند پر حارث سہیل شارٹ لیگ پر کیچ ہو گئے۔

لائن نے اگلے اوور میں اسد شفیق کو بھی صفر کے سکور پر کیچ کروا دیا۔ ان کی جگہ آنے والے بابر اعظم نے بھی کریز پر زیادہ دیر ٹھہرنے کی زحمت نہ کی اور وہ بھی کوئی سکور کیے بغیر باہر نکل کر کھیلنے کی کوشش میں بولڈ ہو گئے۔

اس میچ کے لیے پاکستان کی ٹیم میں دو تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ پہلے ٹیسٹ میں زخمی ہونے والے بلے باز امام الحق کی جگہ فخر زمان اور وہاب ریاض کی جگہ میر حمزہ کو ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

یہ ان دونوں بلے بازوں کے کریئر کا پہلا ٹیسٹ میچ ہے۔

پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین یہ ٹیسٹ سیریز دو میچوں پر مشتمل ہے اور دبئی میں کھیلا جانے والے پہلا ٹیسٹ سنسنی خیز مقابلے کے بعد برابری پر ختم ہو گیا تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here